Motivational Poetry in Urdu

Advertisement
Motivational Poetry in Urdu

Do you require motivation? If you want to motivate a friend or family member, this is the post for you. Best Motivational shayari in Urdu may be found here. Life is full of ups and downs. We all go through difficult situations in our lives. We desperately need motivation at this point. We are presenting the most inspirational and motivating urdu shayari.

Inspirational shayari or Motivational Words may definitely improve our energy and offer us mental and spiritual power. Find Urdu Motivational Shyari to help you stay motivated.

Motivational shayari in Urdu

عقابی روح جب بیدار ہوتی ہے جوانوں میں
نظر آتی ہے ان کو اپنی منزل آسمانوں میں

Motivational Poetry in Urdu

مٹا دے اپنی ہستی کو ، اگر کُچھ مرتبہ چاہے
کہ دانہ خاک میں مِل کر گُلِ گُلزار ہوتا ہے

اُٹھ کہ اب بزمِ جہاں کا اور ہی انداز ہے
مشرق و مغرب میں تیرے دور کا آغاز ہے

کھول آنکھ ، زمیں دیکھ،فلک دیکھ، فِضا دیکھ
مشرق سے نِکلتے ہوئے سورج کو ذرا دیکھ

اُس قوم کو شمشیر کی حاجت نہی رہتی
ہو جس کے جوانوں کی خودی صورتِ فولاد

نہیں تیرا نشیمن قصرِ سُلطانی کے گُنبد پر
تُو شاہین ہے بسیرا کر پہاڑوں کی چٹانوں پر

شاہیں کبھی پرواز سے تھک کر نہیں گرتا
پُر دم ہے اگر تُو ، تو نہیں خطرہِ افتاد

غلامی میں نہ کام آتی ہیں شمشیریں نہ تدبیریں
جو ہو ذوقِ یقیں پیدا، تو کٹ جاتی ہیں زنجیریں

تُندی بادِ مُخالِف سے نہ گھبرا اے عُقاب
یہ تو چلتی ہے تُجھے اُنچا اُڑانے کے لِیے

Advertisement

پھُول کی پتی سے کٹ سکتا ہے ہیرے کا جِگر
مردِناداں پر کلام نرم و نازک بے اثر

نہیں ہے ناامید اقبال اپنی کشتِ ویراں سے
ذرا نم ہو تو یہ مٹی بڑی زرخیز ہے ساقی

ملے گا منزلِ مقصود کا اُسی کو سُراغ
اندھیری شب میں ہے چیتے کی آنکھ جس کا چراغ

وقت سے پہلے حادثوں سے لڑا ہوں
میں اپنی عُمر سے کئی سال بڑا ہوں

شاخیں اگر گِر رہی ہیں، تو پتے بھی آئیں گے
یہ دِن اگر بُرے ہیں تو اچھے بھی آئیں گے

Inspirational shayari

مُقدر جن کے اونچے اور اعلی بخت ہوتے ہیں
زندگی میں اُنہی کے امتحاں بھی سخت ہوتے ہیں

زندگی کی بھی یہی ریت ہے
ہار کے بعد ہی جیت ہے

اے طائرِ لاہوتی، اس رزق سے موت اچھی
جس رزق سے آتی ہو پرواز میں کوتاہی

طوفانوں سے آنکھ ملاو، سیلابوں پر وار کرو
ملاحوں کے چکر چھوڑو، تیر کے دریا پار کرو

سفر میں مشکلیں آئیں ، تو ہمت اور بڑھتی ہے
کوئی جب راستہ روکے تو ، جُرات اور بڑھتی ہے

رنج سے خوگر ہوا انساں تو مٹ جاتا ہے رنج
مشکلیں مجھ پر پڑیں اتنی کہ آساں ہو گئیں

لہروں سے ڈر کر نوکا پار نہیں ہوتی
کوشش کرنے والوں کی ہار نہیں ہوتی

کشتی بھی نہیں بدلی دریا بھی نہیں بدلا
اور ڈوبنے ولوں کا جذبہ بھی نہیں بدلا
منزل بھی نہیں پائی رستہ بھی نہیں بدلا
ہے شوقِ سفر ایسا اِک عرصے سے یارو

کون کہتا ہے کہ موت آئی تو مَر جاوں گا
میں تو دریا ہوں ، سمندر میں اُتر جاوں گا

وقت کی گردشوں کا غم نہ کرو
حوصلے مُشکلوں میں پلتے ہیں

اُمیدیں یوں نہ توڑو تُم، کہ یہ قانون ہے ربّ کا
سَحر لازم ہے گویا شب میں کِتنی ہی طوالت ہو

خواہش سے نہیں گِرتے پھل جھولی میں
وقت کی شاخ کو میرے دوست ہلانا ہو گا

کچھ نہیں ہو گا اندھیروں کو بُرا کہنے سے
اپنے حِصّے کا دِیا خود ہی جلانا ہو گا

khwahish say nahi girtay phal jholi main
waqt ki shakh ko meray dost hilana ho ga
kuch nahi ho ga andheron ko bura kehnay say
apnay hissay ka diya khud hi jalana ho ga

منزلیں چاہے کِتنی ہی اونچی کیوں نہ ہو
راستے ہمیشہ پیروں کے نیچے ہوتے ہیں۔

manzilain chahain kitni hi onchi kiyun na ho
rastay hamesha peron kay neechay hoty hain

جن میں تنہا چلنے کے حوصلے ہوتے ہیں
ایک دِن اُن ہی کے پیچھے قافلے ہوتے ہیں۔

jin main tanha chalnay kay hoslay hotay hain
aik din un hi kay peechay qafaly hotay hain

منزل تو مِلے گی بھٹک کر ہی سہی
گمراہ تو وہ ہیں جو گھر سے نِکلے ہی نہیں

manzil tu milay gi bhatak kar hi sahi
gumrah tu wo log hain jo ghar say niklay hi nahi

ڈوبنا پڑتا ہے اٌبھرنے سے پہلے
غروب ہونے کا مطلب زوال نہیں ہوتا

dobna parrta hai ubhernay say pehlay
gharob honay ka matlab zawal nahi hota

محنت اتنی خاموشی سے کرو
کہ تٌمھاری کامیابی شور مچا دے

شاخوں سے ٹوٹ جائیں وہ پتے نہیں ہیں ہم
آندھی سے کوئی کہہ دے کہ اوقات میں رہے

Saakh se Toot jayien Wo pattay Nahi hain hun
Aandhi se Koi Keh De ke Auqaat mie rahay

جب چل پڑے ہو سفر کو تو پھر حوصلہ رکھو
صحرا کہیں، کہیں پہ سمندر بھی آئیں گے

Jab Chal Parray Ho Safar Ko Tou Phir Hosla Rakho
Sehraa Kaheen , Kaheen pe Samaandar bhi Ayien Gay

منزل سے آگے بڑھ کر منزل تلاش کر
مل جائے تجھ کو دریا تو سمندر تلاش کر

Munzil se Agay Barh kar Munzil Talash Kar
Mil jaye Tuj ko Darya Tou Samndar Talash Kar

Motivational Shayari in 2 Lines

ہم کو مٹاسکے یہ زمانے میں دم نہیں
ہم سے زمانہ خود ہے زمانے سے ہم نہیں

Hum Ko Mitta Sakkay Yeh Zamanay Mie Dum Nahi
Hum se Zamana Khud hay Zamanay se HUm Nahi

نہیں تیرا نشیمن قصر سلطانی کے گنبد پر
تو شاہیں ہے بسیرا کر پہاڑوں کی چٹانوں میں

Nahi Tera nasheman Qasar e Sultani ke Gumbad Par
Toun Shaheen Hay Baseera Kar Paharon Ki Chitano mie

کوئی قابل ہو تو ہم شان کئی دیتے ہیں
ڈھونڈے والوں کو دنیا بھی نئی دیتے ہیں

Koi Qabil Ho Tou Hum Shan e Kaie Detay Hain
Dhondnay Walon Ko Duniya Bhi Nai Detay hain

وقت اچھا بھی آئے گا ناصر
غم نہ کر زندگی پڑی ہے ابھی

Waqt Acha Bhi Aye Ga Nasir
Gham Na Kar Zindgi Parri hay Abhi

نہ منہ چھپا کے جئے ہم نہ سر جھکا کے جئے
ستم گروں کی نظر سے نظر ملا کے جئے
اب ایک رات اگر کم جئے تو کم ہی سہی
یہی بہت ہے کہ ہم مشعلیں جلا کے جیئے

Nah Munnh Chupa ke jiye na Sir jhukka ke jiye
Sitm garom ke nazar se nazar mila ke jiye
Ab aik raat agar kam jiye to kam hi sahee
Yeh hi bhot hay k hum Mishalain jala ke jiye

عقابی روح جب بیدار ہوتی ہے جوانوں میں
نظر آتی ہے ان کو اپنی منزل آسمانوں میں

Auqaabi Rooh Jab Bedaar Hoti hay Jawano Mie
Nazar Aati hay Un Ko Apni Manzil Aasmaano Mie

جو یقین کی راہ میں چل پڑے
انہیں منزلوں نے پناہ دی

Jo Yaqeen Ki Rah mie Chal Paray
Unain Manzlo Ne Pannah Di

Daulat e duniya nahin jane ki hargiz tery sath
Bad tery sab yahin ai be_khabar batt jae gi

دُولتِ دنیا نہیں جانے کی ہرگز تیرے ساتھ

باد تیرے سب یہیں اے بے خبر بٹ جا_ئے گا

Kesi ko be_sabab shohrat nahin milti hay ai waheed
Unhin k naam hain duniya mein jin_k kaam achy hain

کسی کو بے سبب شہر-ت نہیں ملتی ہے اے واہید
ا-نہیں کے نام ہیں دنیا میں جن کے کا-م اچھے ہیں

dill naa omid tu nai nakaam hi tu hay
lambe hay ghamm ki shaaam magarr

kuddi ko kr bolaand ittna keh har taqddir se pahle
kuda bandey se kudd pochey bata teri razaa keya hay

sitaroon se aage jahaan aor bhe han
abhe ishhq ke imtihaan aor bhe han

main akkela hi chala thaa janib ë manzill magar
log saath aatey gae aor karwaan banta gayaa

kashttiyan sab ke kinary pe pahunch jaati hain
na kuda jin ka nai unka kudaa hota hay

mere junon ka natijja zaroor niklega
isi siyahh samundar se noor niklega

chala jata hon hansta khelta maoj ë hawadis say
agar asaniyan hoon zindagi dosh-war ho jaey

tere mathey pe yeh aanchal bahot hi khoob hay lekin
tu is aanchal se ik parchaam bana leti tu acha thaa

ranj se khuar howa insaan tu mitt jaata hay ranj
mushkilenn mujh-par padin itni keh asaan ho gaen

Na urooj achha hai na ziwal achha hai
khuda Jis hal mein rakhe bus vo hal achcha hai

Dard ki inteha sah kar , khushiyon ki eltaja mangi hai
is bar lafz mohabbat se ham ne ya rab panah mangi hai

Chupke chupke raat din aansu bahana yad hai
hamko ab tak aashiqui ka woh zamana yaad hai

Hayat le ke chalo kaenat le ke chalo
chalo_to_saare_zamane_ko_saath_le_ke_chalo

Pyaso raho na dasht mein barish ke muntazir
maaro zamen pe paanv keh paani nikal pade

Apna zamana aap banate hain ahl ë dil
ham vo nahin keh jin-ko zamana bana gaya

Koshish bhi kar umed bhi rakh rasta bhi chun
phir is ke baad thoda muqadar talash kar

Baare duniya mein raho gham zada ya shaad raho
aisa kuch kar ke chalo yahan keh bahot yad raho

Yeh kah k dil ne mere hausle badhae hain
ghamon ki dhuup ke aage khushi k saae hain

Badh k tufan ko aghosh mein le le apni
Dubne waale tere hath se sahil to gaya

Raat ko jeet to paata nahi lekin yeh charagh
kam_se_kam_raat_ka_nuqsan_bahot_karta_hay

Tu samajhta hay havadis hain satane keliye
yeh hua hain zahir azmane keliye

Leave a Reply

Your email address will not be published.