Wasi shah poetry in urdu

Wasi shah poetry in urdu
Wasi shah poetry in urdu

Wasi Shah Poems helps readers to express themselves via beautiful poetry. Wasi Shah shayari and ghazals are renowned among those who enjoy reading good poetry. You can read 2 and 4 line poetry and download Wasi Shah poetry photos to share with your loved ones, such as friends and family.
Several books have been written about Wasi Shah Shayari up to this point. Urdu Ghazal readers have their own preferences, and you can read Wasi Shah poetry in Urdu & English from various categories below.

Wasi shah poetry in urdu 2 lines

Best poetry of wasi shah

Hijr Ka Taara Doob Chala Hai Dhalne Lagi Hai Raat Wasi
Katra Katra Baras Rahi Hai Ashkon Ki Barsaat Wasi

حجر کا تارا ڈوب چالا ہے ڈھلنے لگی ہے رات وصی
قطرہ قطرہ برس رہی ہے اشکوں کی برسات وصی

Udasiyon Se Wabasta Hai Yeh Zindagi Meri ‘WASI’
Khuda Gawaah Hai K Phir Bhi Tujhe Yaad Karte Hain

اداسیوں سے وابستہ ہے یہ زندگی میری وصی
خدا گواہ ہے کے پھر بھی تجھے یاد کرتے ہیں

Kaun Rota Hai Yahan Raat Ke Sannate Mein
Mere Jaisa Hai Koi Ishq Ka Mara Hoga

کون روتا ہے یہاں رات کے سناٹے میں
میرے جیسا ہے کوئی عشق کا مارا ہوگا

Aankhon Se Mri Is Liy Lali Ni Jati
Yadon Sy Koi Raat Khali Ni jati

آنکھوں سے مری اس لیے لالی نہیں جاتی
یادوں سے کوی رات کھالی نہیں جاتی

Wo Bohat Rakhta Hai Chahat Ki Namazon Ka Hisab
Wo To Ik Sajda Na Bakhshy Jo Qaza Hu Jai

وہ بہت رکھتا چاہت کی نمازوں کا حساب
وہ تو ایک سجدہ نہ بخشے جو قضا ہو جاے

Is Qadar Payar Sy Na Bola Kar
Dushmani Ka Guman Hota Hai

اس قدر پیار سے نہ بولا کر
دشمنی کا گمان ہوتا ہےنہ

Kisi Ki Aankh Se Sapne Chura Kar Kuch Nahi Milta
Munderon Se Chiraghon Ko Bojha Kar Kuch Nahi Milta

کسی کی آنکھ سے سپنے چرا کر کچھ نہیں ملتا
منڈیروں سے چراغوں کو بجھا کر کچھ نہیں ملتا

Hazaron Dukh Paren Sehna Mohabbat Mar Nahi Sakti
Hai Tum Se Bus Yahe Kehna Mohabbat Mar Nahi Sakti

ہزاروں دکھ پڑیں سہنا محبت مر نہیں سکتی
ہے تم سے بس یہی کہنا محبت مر نہیں سکتی

Jab Raat Ki Nagin Dasti Hai
Nus Nus Mein Zehar Utarta Hai

جب رات کی ناگین ڈستی ہے
نس نس میں زہر اُتارتا ہے

Wasi shah poetry in urdu front

Udas Raaton Mai Teez Kafi Ki Talkhi Mai
Wo Kuch Zayada Hi Yaad Aata Hai Sardiyon Mai

اداس راتوں میں تیز کافی کی تلخیوں میں
وہ کچھ زیادہ ہی یاد آتا ہے سردیوں میں

Tou Mai Bhi Khush Hun Koi Us Se Jaa Kar Khe Dena
Agar Wo Khush Hai Mujhe Bekrar Karte Hoye

تو میں بھی خوش ہوں کوئی اس سے جا کے کہہ دینا
اگر وہ خوش ہے مجھے بے قرار کرتے ہوئے

Aankhon Mai Chub Gain Teri Yaadon Ki Kirchiyan
Kandhon Per Gham Ki Shawl Hai Aur Chand Raat Hai


آنکھوں میں چبھ گئیں تری یادوں کی کرچیاں
کاندھوں پہ غم کی شال ہے اور چاند رات ہے

Wasi shah romantic poetry in urdu

Falak Pay Chand Kay Haaly Bhe Sogh Krty Hen
Jo Tou Nahi Tu Ujaly Bhe Sogh Krty Hen

فلک پے چاند کے حالے بھی سوگھ کرتے ہں
جو تو نہیں تواُجالے بھی سوگھ کرتے ہں

Tum Se Mohabbat Kar K Hum Bohot Pachta Rahe Hain
Kash Sazaa-E-Mohabbat Se Sazaa-E-Maut Achha Tha

تم سے محبت کر کے ہم بہت پچھتا رہے ہیں
کاش سزائے محبت سے سزائے موت اچھا تھا

Kab Nahin Naaz Uthaye Hain Tumhare Mai Ne
Dekho Aanchal Pe Sajaye Hain Sitare Mai Ne

کب نہیں ناز اُٹھائے ہیں تمہارے میں نے
دیکھو آنچل پے سجاے ہیں ستارے میں نے

Dheeray Se Sarakti Hai Raat Us Ke Aanchal Ki Tarah
Uska Chehra Nazar Aata Hai Jheel Main Kanwal Ki Tarah

دھیرے سے سرکتی ہے رات اُس کے آنچل کی طرح
اُس کا چہرا نظر اتا ہے جھیل پیں کنول کی طرح

Nahi Hota Kisi Tabib Se Is Marz Ka Ilaaj Wasi
Ishq Laa Ilaaj Hai, Bas Parheez Kijiye

نہیں ھوتا کسی طبیب سے اس مرض کا علاج وصی
عـــشـــق لا عــلاج ھـــــے ، بس پــــرہــیــز کیجیے

Ye Jo Chehre Se Tumhen Lagte Hain Bimar Se Hum
Khob Roye Hain Lipat Kar Dar-O-Deewar Se Hum

یہ جو چہرے سے تمہیں لگتے ہیں بیمار سے ہم
خوب روئے ہیں لیپٹ کر در و دیوار سے ہم

H0ti H0 Gi Mere B0sey Ki Talab Mai Pagal
Jab Bhi Zulf0n Mai K0i Ph00l Sajaati H0 Gi

Best Shayari of Wasi Shah

ہوتی ہوگی میرے بوسے کی طلب میں پاگل
جب بھی زلفوں میں کوئی پھول سجاتی ہوگی

Kon Kehta Hai K Maut Aayegi Aur Main Mar Jaoonga
Main To Dariya Hoon Samandar Main Uttr Jaoonga

کون کہتا ہے کے موت آے گی اور میں مر جاوّں گا
میں تو دریا ہوں سمندر میں اُتّر جاوّں گا

Jaise Ho Umar Bhar Ka Asasa Ghareeb Ka
Kuch Is Tarah Se Mai Ne Sambhale Tumhare Khat

جیسے ہو عمر بھر کا اثاثہ غریب کا
کچھ اس طرح سے میں نے سنبھالے تمہارے خط

Hum Haseen Hone Ka Dawa Toh Nahi Karte Wasi Magar,
Jissey Aankh Bhar Kar Dekh Lein Uljhan Mein Daal Dete Hain

ہم حسین ہونے کا دعویٰ تو نہیں کرتے وسی مگر
جسے آنکھ بھر کر دیکھ لیں اُلجھن میں ڈال دیتے ہیں

Tum Meri Aankh Ke Tevar Na Bula Pao Ge,
An Kahee Baat Ko Samjho Ge Toh Yaad Aaunga

تم میری آنکھ کے تیور نہ بُھلا پاؤ گے
ان کہی بات کو سمجھو گے تو یاد آؤں گا

Apne Ehsas Se Chu Kar Mujhe Sandal Kar Do
Me K Sadiyon Se Adhoora Hun Mukamal Kar Do

اپنے احساس سے چھو کر مجھے صندل کر دو
میں کہ صدیوں سے ادھورا ہوں مکمل کر دو

Na Tumhain Hosh Rahe Aur Na Muje Hosh Rahe
Is Qadar Toot K Chaho Muje Pagal Kar Do

نہ تمہیں ہوش رہے اور نہ مجھے ہوش رہے
اس قدر ٹوٹ کے چاہو مجھے پاگل کر دو

Usne Jab Meri Taraf Pyar Se Dekha Hoga
Mere Baarey Me Bare Ghor Se Socha Hoga

اس نے جب میری طرف پیار سے دیکھا ہوگا
میرے بارے میں بڑے گور سے سوچا ہوگا

Gar Sukoon Chahiye Is Lamha-e-Maujud Mai Bhi
Aao Is Lamha-e-Maujud Se Bahar Niklen

گر سکوں چاہیے اس لمحۂ موجود میں بھی
آؤ اس لمحۂ موجود سے باہر نکلیں

Phele Tujhe Banaya Bana Kar Mita Diya
Jitne Bhi Faisle Kiye Saare Ghalat Kiye

پہلے تجھے بنایا بنا کر مٹا دیا
جتنے بھی فیصلے کیے سارے غلط کیے

Zindagi Ab K Mera Naam Na Shamil Karna
Gar Ye Tai Hai K Yehi Khel Dobara Hoga

زندگی اب کے مرا نام نہ شامل کرنا
گر یہ طے ہے کہ یہی کھیل دوبارہ ہوگا

Hazaron Mausamon Ki Hukmarani Hai Mere Dil Par
“Wasi” Mai Jab Bhi Hansta Hun To Ankhen Bheeg Jaati hain

ہزاروں موسموں کی حکمرانی ہے مرے دل پر
وصیؔ میں جب بھی ہنستا ہوں تو آنکھیں بھیگ جاتی ہیں

Har Ek Mausam Mai Roshni Si Bikherte Hain
Tumhare Gham K Chirag Meri Udasiyon Mai

ہر ایک موسم میں روشنی سی بکھیرتے ہیں
تمہارے غم کے چراغ میری اداسیوں میں

Muje Khabar Thi K Ab Laut Kar Na Aunga
So Tujh Ko Yaad Kiye Dil Pe Vaar Karte Hue

مجھے خبر تھی کہ اب لوٹ کر نہ آؤں گا
سو تجھ کو یاد کیا دل پہ وار کرتے ہوئے

Har Ek Muflis K Mathe Par Alam Ki Dastaanain Hain
Koi Chehra Bhi Parhta Hun To Ankhen Bheeg Jaati Hain

ہر اک مفلس کے ماتھے پر الم کی داستانیں ہیں
کوئی چہرہ بھی پڑھتا ہوں تو آنکھیں بھیگ جاتی ہیں

Wasi shah poetry in urdu lyrics

Kaun Kehta Hai Mulaqat Meri Aaj Ki Hai
Tu Meri Rooh k Andar Hai Kai Sadiyon Se

کون کہتا ہے ملاقات مری آج کی ہے
تو مری روح کے اندر ہے کئی صدیوں سے

Jo Tu Nahi Hai To Ye Mukammal Na Ho Sakengi
Teri Yahi Ehmiyat Hai Meri Kahaniyon Main

جو تو نہیں ہے تو یہ مکمل نہ ہو سکیں گی
تری یہی اہمیت ہے میری کہانیوں میں

Is Judai Mai Tum Andar Se Bikhar Jaoge
Kisi Maazur Ko Dekhoge To Yaad Aunga

اس جدائی میں تم اندر سے بکھر جاؤ گے
کسی معذور کو دیکھو گے تو یاد آؤں گا

Tumhara Naam Likhne Ki Ijazat Chin Gai Jab Se
Koi Bhi Lafz Likhta Hun To Ankhen Bheeg Jaati Hain

تمہارا نام لکھنے کی اجازت چھن گئی جب سے
کوئی بھی لفظ لکھتا ہوں تو آنکھیں بھیگ جاتی ہیں

Mere Chehre Se Mera Dard Na Parh Paoge Wasi,
Meri Aadat Hai Har Baat Pe Muskura Dena

Gazal of Wasi Shah Uski Aankhon Mein Mohabbat Ka Sitara Hoga

Uski Aankhon Mein Mohabbat Ka Sitara Hoga
Ek Din Aaye Ga Wo Shakhs Hamara Hoga,
Tum Jahan Mere Liye Sipiyan Chunti Hogi
Wo Kisi Aur Hee Duniya Ka Kinara Hoga,
Zindagi..! Ab K Mera Naam Na Shamil Karna
Gar Yeh Tay Hai Ke Yehi Khel Dobara Hoga,
Jiske Hone Se Meri Saans Chala Karti Thi
Kis Tarha Uske Begair Guzara Hoga,
Yeh Achanak Jo Ujaala Sa Hua Jata Hai
Dil Ne Chupke Se Tera Naam Pukaara Hoga,
Ishq Karna Hai Toh Din Raat Ussey Sochna Hai
Aur Kuch Zehen Mein Aaya To Khasara Hoga,
Yeh Jo Pani Mein Chala Aaya Sunehri Sa Gharoor
Usne Dariya Mein Kahin Paun Utara Hoga,
Kon Rota Hai Yahan Raat Ke Sanaton Mein
Mere Jaisa Hee Koi Hijr Ka Maara Hoga,
Mujh Ko Maloom Hai Junhi Main Qadam Rakhun ga
Zindagi Tera Koi Aur Kinara Hoga,
Jo Meri Rooh Mein Baadal Se Garajte Hain WASI
Usne Seene Mein Koi Dard Utara Ho Ga,
Kaam Mushkil Hai Magar Jeet Hee Lunga Usko
Mere Mola Ka WASI Junhi Ishara Hoga

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *